چور بلا؛ جو ملبوسات چرانے کا شوقین ہے

فریکل کی مالکن کا کہنا ہے کہ اب وہ لوگوں کو یہ بتاتے ہوئے کتراتی ہے کہ یہ اس کا بلا ہے۔ فوٹو: سوشل میڈیا

فریکل کی مالکن کا کہنا ہے کہ اب وہ لوگوں کو یہ بتاتے ہوئے کتراتی ہے کہ یہ اس کا بلا ہے۔ فوٹو: سوشل میڈیا

ہمارے گلی کوچوں میں پائے جانے والے بلے اور بلیاں نت نئے کارنامے انجام دیتے رہے ہیں مگر امریکا کے رہائشی ،ایول ڈوور کا پالتو بلا اس حوالے سے حیران کن ثابت ہوا۔

فریکل نامی یہ بلا جوشیلا اور مہم جو ہونے کے علاوہ ایک زبردست شکاری بھی ہے۔مگر اس کا شکار عام بلوں کی طرح چوہے اور پرندے نہیں بلکہ انسانوں کے ملبوسات ہیں۔فریکل محلے کے گھروں سے کپڑے چرا کر فاتحانہ انداز میں آوازیں نکالتے ہوئے گھر میں داخل ہوتا ہے۔کبھی اس کے منہ میں جرابوںکا جوڑا ہوتا ہے جنھیں وہ اپنے مالک کے قدموں تلے رکھ دیتا ہے۔

فریکل کبھی بنیان،بچوں کے ننھے منے کپڑے تو کبھی اونی جمپر ایک بازو سے گھسیٹتے ادھر ادھر پھرتا ہے۔اس کی چوریوں سے عیاں ہے کہ وہ محلے داروں کی لانڈریوں میں رکھی ٹوکریوں پر چھاپہ مارتا اور وہاں سے کپڑے لے اڑتا ہے۔

فریکل کی مالکن کا کہنا ہے کہ اب وہ لوگوں کو یہ بتاتے ہوئے کتراتی ہے کہ یہ اس کا بلا ہے۔موصوف کی تخریبی کارروائیوں کے سبب علاقے میں فریکل کی شہرت داغدار ہو چکی۔حد یہ ہے کہ اب مالکن کے دروازے پر چھوٹے چھوٹے بچے بھی اپنے کھوئے ہوئے کپڑوں کی بابت دریافت کرتے ہیں۔مگر آہستہ آہستہ فریکل بوڑھا ہو رہا ہے اور زیادہ وقت گھر پر ہی گذارتا ہے۔لہذا اس کی چوریاں برائے نام رہ گئی ہیں۔

تحریم قاضی

You might also like