” ہیلو ! میں چودھری شجاعت بات کررہا ہوں اور عمران خان سے ملنا چاہتا ہوں۔۔۔۔۔” کپتان کو بنی گالہ فون کیا تو آگے سے ایسا کیا جواب ملا کہ سینئر سیاستدان کے 14 طبق روشن ہو گئے؟ راؤف کلاسرا نے دھماکے دار انکشاف کر دیا

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) مسلم لیگ (ق) کے وفد کی چئیرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان سے ملاقات سے قبل ایک ایسی کہانی سامنے آگئی کہ سننے والوں کے 14طبق روشن ہو گئے ۔ سینئر ملکی صحافی اور تجزیہ کار رئوف کلاسرا کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ (ق) کے ایک وفد نےچودھری شجاعت کی قیادت

میں چئیرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان سے بنی گالہ میں ملاقات کی لیکن اس ملاقات سے قبل جب چودھری شجاعت نے عمران خان کے بنی گالہ کے فون نمبر پر رابطہ کیا اور ان کے آپریٹر کو بتایا کہ وہ چودھری شجاعت ہیں اور عمران خان سے ملناچاہتے ہیں تو آپریٹر نے جواب دیا ۔ پہلے آپ مجھے بتائیں کہ آپ عمران خان سے ملاقات کیوں کرنا چاہتےہیں۔ چودھری شجاعت نے یہ بات سن کر غصے میں آکر فون بند کیا ۔ راؤف کلاسر ا کا کہنا ہے کہ اب جبکہ ملک میں تبدیلی آہی رہی ہے تو خان صاحب کو چاہیے کہ ایک تبدیلی اپنے سٹاف میں بھی لے ہی آئیں کیونکہ یہ رویہ عوام کے منتخب نمائندوں کےلئے قابل برداشت نہیں ہوتا۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے چوہدری برادران سے ملاقات کر کے انہیں چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کا پیغام پہنچایا ہے۔ چوہدری شجاعت اور چوہدری پرویز الہٰی آج بنی گالا میں عمران خان سے ملاقات کریں گے۔پی ٹی آئی کے رہنما فواد چوہدری نے اسلام آباد میں عشائیے پر چوہدری شجاعت حسین اور چوہدری پرویز الہٰی سے ملاقات کی اور انہیں عمران خان کا پیغام پہنچایا۔ پی ٹی آئی سربراہ کی دعوت

پر چوہدری برادران آج بنی گالا میں عمران خان سے بھی ملاقات کریں گے جس میں مونس الہٰی اور طارق بشیر چیمہ بھی ہمراہ ہوں گے۔ق لیگ کا 4 رکنی وفد عمران خان سے مرکز اور پنجاب میں حکومت سازی پر تبادلہ خیال کرے گا۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق الیہ انتخابات میں ق لیگ کی کامیابی اور پی ٹی آئی کے ساتھ وفاق اور پنجاب میں اتحاد کے پیش نظر حلقہ این اے 65 پر کامیاب ہونے والے چوہدری پرویز الٰہی نے پنجاب میں اعلیٰ عہدہ ملنے پر قومی اسمبلی کی دونوں سیٹوں کو خالی کرنے کا علان کیا ہے، ان نشستوں پر امیدوار کے طور گجرات سے چوہدری مونس الٰہی اور تلہ گنگ سے چوہدری شجاعت حسین کا نام سامنے آیا ہے جس کے بعد علاقہ میں ہلچل سی مچ گئی ہے۔معتبر ذرائع نے بتایا ہے کہ چوہدری پرویز الٰہی کی چھوڑی جانے والی سیٹ کے حوالے تلہ گنگ کی اعلیٰ شخصیات سے جب رائے لی گئی تو انہوں نے سردار منصور ٹمن کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہوئے ، راسخ الٰہی کو تلہ گنگ سے الیکشن لڑانے کا مشورہ دیا تاہم اس کے برعکس چوہدری شجاعت حسین کو تلہ گنگ سے الیکشن لڑانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے بعد ان کو وفاق میں اعلیٰ ذمہ داری دینے ملنے کا بھی امکان ہے۔(ف،م)

Source

You might also like